حمل کے دوران اس طرح سونے سے بچہ مردہ پیدا ہوسکتا ہے حاملہ خواتین کیلئے انتہائی ضروری

اولاد اللہ تعالیٰ کی بہت بڑی نعمت ہے جو کہ والدین کے
بڑھاپے کا سہارہ بنتی ہے جب ایک عورت کو پتا چلتا ہے کہ وہ ماں بننے والی ہے تو اس کی خوشی دیکھنے والی
ہوتی ہے ۔

ظاہری سے بات ہے کہ ماں بننا بہت بڑا رتبہ ہے حاملہ خواتین کو بہت ساری احتیاط کی ضرورت ہوتی ہے ۔ لیکن اکثر خواتین اس پرذرا دھیان نہیں دیتی اس کا نتیجہ بہت خطرناک نکلتی ہیں۔ ان احتیاطی تدابیر میں سے ایک تدبیر یہ بھی ہے کہ اگر حاملہ خواتین اس طریقے سے سوئے اس کا بچہ نارمل اور زندہ پیدا ہوگا ۔

آپ میں سے اکثر لوگ یہ نہیں پتہ ہوتا وہ طریقہ کونسا ہے یہ حاملہ خواتین کیلئے بہت اچھی معلومات ہے ۔ دنیا میں روزانہ بڑی تعداد میں مردہ بچے پیدا ہوتے ہیں اکثر ماں باپ مردہ بچے کی پیدائش کا سبب جانا چاہتے ہیں کئی دوسرے اسباب کے ساتھ ایک سبب حاملہ ماں کے لیٹنے کی پوزیشن بھی ہوتی ہے ۔

ماں باپ کو اس بارے میں درست آگاہی ہونی چاہیے تاکہ آنے والے وقت میں وہ احتیاط سے کام لے سکیں ۔محققین کا کہنا ہے کہ خواتین جس انداز میں سوتی ہیں وہ بہت اہم ہے اور جب وہ بیدار ہوتی ہیں اور یہ دیکھتی ہیں کہ وہ اپنی پیٹھ کے بل سو رہی تھیں تو انھیں اس بات سے پریشان نہیں ہونا چاہیے۔خیال رہے کہ برطانیہ میں ہر سوا دو سو بچے کی ولادت میں ایک مردہ بچہ پیدا ہوتا ہے جبکہ اس تحقیق کے مصنفوں کا کہنا ہے کہ اگر خواتین کروٹ سوئیں تو سال میں کم از کم 130 بچوں کی زندگیاں بچائی جا سکتی ہیں۔

مردہ بچے کی پیدائش کے خطرے کے اضافے کے بارے میں وثوق کے ساتھ تو کچھ نہیں کہا جاسکتا لیکن بہت سے اعدادوشمار بتاتے ہیں کہ جب کوئی حاملہ خاتون پیٹھ کے بل سوتی ہے تو بچہ اور بچہ دانی دونوں کا وزن خون کی نلی پر اثر ڈالتا ہے جس سے بچے میں آکسیجن کی کمی ہو سکتی ہے۔ والدین کو یہ معلوم ہونا چاہیے کہ وہ کس طرح اپنے بچے کی صحت اور سلامتی کو یقینی بناسکتے ہیں۔حال ہی میں کی گئی ایک تازہ ترین تحقیق میں یہ فیکٹ سامنے آیا کہ جو حاملہ خواتین حمل کے آخری تین ماہ میں کمرکے بل سوتی ہیں۔

ان کے یہاں مردہ بچے کی پیدائش کا چانس ڈبل ہوجاتا ہے اور اگر خواتین حمل کے آخری تین میں سیدھی لیٹنے کی بجائے کروٹ لے کر لیٹیں تو بچے کی نارمل پیدائش کا چانس بڑھ جاتا ہے حاملہ ماں کے یسدھا لیٹنے کی صورت میں بچے کے دل کی دھڑکن بھی سست پڑ جاتی ہے اور یہ چیز بچے کی موت کا سبب بن سکتی ہے ۔حاملہ خواتین کروٹ لے کر سونے میں آسانی پیدا کرنے کیلئے کوئی تکیہ یا کشن استعمال کرسکتی ہیں رات میں سونے کیلئے کروٹ لیکر سونے کی کوشش کریں اسی طرح اگردن کے وقت بھی آرام کرنا ہو تو کوشش کریں کہ سیدھی لیٹنے کی بجائے کروٹ لیکر لیٹیں اس سے بچے کی صحت پر بہت مثبت اثرات رونما ہوں گے ۔

Sharing is caring!

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.