شوہر کو قریب کرنے کےلیے بیوی کو چاہیے کہ دوران قربت خاوند کی مرضی سے دوران وظیفہ زوجیت میں شکایات کرے کہ

اکثر عورتیں مجھے شکوہ کناں نظر آتی ہیں کہ ان کے خاوند ان کے قریب نہیں آتے۔ ذیل معاشرتی تجر بات سے چند ایسے تصرفات لکھ رہا ہوں جن کا خیال رکھنے سے آپ کا خاوند کبھی بھی آپ سے دور نہیں ہوگا۔ غیرت ہر شو ہر کو مطلوب ہوتی ہے۔ لیکن جب غیرت اپنی حد سے بڑھ جائے تو شوہر کے لیے عدم اعتماد پیدا کردیتی ہے۔ لہذا بیوی کو چاہیے کہ دوران قربت خاوند سے شرعی حدود میں رہتے ہوئے غیرت کا مظا ہر ہ نہ کرے، حرام کام سےا جتناب کرتے ہوئے خاوند کو اپنے جسم سے کھیلنے دیں۔اکثر بیویاں شادی کے کچھ عر صہ بعد ہی شو ہر کے لیے زیب و زینت اور اپنے جسم کی کئیر کرنا یکسر چھوڑ دیتی ہیں ، جبکہ کسی پارٹی یا فنکشن میں جانے کے لیے اس کا اہتمام کرتی ہیں ، یہ چیز مردوں میں غصہ بھر دیتی ہے۔ اکثر چیز جس سے خاوند مبغوض ہوتا ہے وہ ہمہ وقت منہ چڑانے والی اور غصیلی عورت ہے ، اگر آپ میں ایسی عادت ہے تو اس عادت کو مسکراہٹ والی عادت میں بدل دیں چند دن میں مثبت رزلٹ آپ کے سامنے ہوگا۔اکثر اوقات بیوی محبت کا وہ طریقہ نہیں اپناتی جو خاوند کو پسند کرتا ہے بیوی کو چاہیے کہ وہ خاوند کے لیے گھر میں رومانسی ماحول بنائے رکھے ، تاکہ خاوند آپ میں سکون تلاش کرے ، وہ دنیا کے رش اور تھکاوٹ سے نکلے تو آپ اس کو محبت کے رش میں تھکا دیں۔ جب آپ اپنے شوہر کو خا موش پائیں توجو اس کے دل میں ہے اس کو جاننے کے لیے اصرار نہ کریں، اس سے بھی غصہ آنے کے امکانات ہوتے ہیں ، پانی وغیرہ پلائیں اور ان کو اسی حالت میں چھوڑ دیں

وہ پرسکون ہونے کے بعد خود آپ کو اپنی تنگی اور پریشانی سے آگاہ کرے گا۔ شکو ے شکاتیں کرنے میں غلط وقت کا چناؤ اکثر بیویاں خاوند کے گھر آتے ہی شکایتوں کا پنڈورا باکس لے کر بیٹھ جا تیں ہیں۔ بلا شبہ شکو ے شکایتیں انسانی زندگی کا حصہ ہیں ان سے کسی کو مفرور نہیں ، اگر ان شکو ک و شبہات کی ٹائمنگ درست ہوجائے تو نہ صرف یہ دور ہوسکتے ہیں۔بلکہ آئندہ ان شکو ے شکایتوں میں بہت حد تک کمی بھی ہوسکتی ہے ، ایک اچھی بیوی کے لیے شکایات کا درست وقت وظیفہ زوجیت کا درمیانی وقت ہوتا ہے ، اس میں خاوند آپ کی بات یکسوئی سے سنے گا بھی اور مثبت ری ایکشن بھی لے گا، انشاءاللہ۔ یاد رکھیں ! ازدواجی تعلق ہی آپ کی کامیاب زندگی کی اساس ہے کو شش کیجیے ، کہ ازدواجی تعلق میں ہر وہ کام کیجیے جو آپ کا شو ہر پسند کرتا ہے حتی ٰ کہ وہ کس حرام فعل کا مطالبہ نہ کرے ، خاوند کو اپنے جسم سے بھرپور فائدہ دیجیے ، بلاشبہ آپ اس کے لیے لباس ہیں ، بیوی بننے سے پہلے اس کی رازداں دوست بنیے ، غم کے وقت اس کے لیے ماں جیسی گود بنیے۔

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.