ایسی سات عورتوں سےکبھی شادی نہ کرنا ورنہ خسارے میں رھو گاا

ایک عرب دانا نے اپنے بیٹوں کو نصیحت کی کہ 7 قسم کی عورتوں سے کبھی شادی نہ کرنا، خواہ وہ حسن و جمال اور مال و دولت میں بے مثال ہی کیوں نہ ہوں! وہ سات عورتیں یہ ہیں

۔۔انانہ ، منانہ، كنانہ، حنانہ، حداقہ، براقہ اور شداقہ!

1) انانہ – وہ عورت جو ہر وقت سر پر پٹی باندھے رکھے، کیوں کہ شکوہ و شکایت ہی ہمیشہ اس کا معمول ہو گاـ

انانہ سے مراد وہ عورت لی جاتی ہے جو ہر وقت اپنے شوہر کی شکایت کرتی رہے شکوہ شکایت محبت کا بھی حصہ ہوتا ہے لیکن بار بار شکوہ شکایت کرنا یہ محبت نہیں بلکہ یہ ناشکری ہے تو ایسی عورت آنا کہلاتی ہے جو ہر وقت شکوہ شکایت کرتی رہے

2) منانہ – وہ عورت جو ہر وقت مرد پر احسان ہی جتاتی رہے کہ میں نے تیرے ساتھ یہ یہ احسان کیا اور تجھ سے تو مجھے کچھ حاصل نہیں ہوا

منانا منانا سے مراد وہ عورت ہے جو ہر وقت مرد پر احسان جتا تیرتی ہے یعنی اگر اس میں مرد یا اپنے شوہر کا نام کیا ہے اور اس کی ہے کہ میں نے یہ احسان تجھ پہ کیا میں نے یہ کام تیرا کیا تو ایسی عورت کو منانا کہتے ہیں جو ہر وقت اپنے احسان کو جتنا تیر ہے تو ایسی عورت سے بھی شادی نہیں کرنی چاہیے

3) کنانہ – وہ عورت جو ہمیشہ ماضی کو یاد کرے فلاں وقت میں میرے پاس یہ تھا وہ تھا

4) حنانہ – وہ عورت جو ہر وقت اپنے سابقہ خاوند کو ہی یاد کرتی رہے اور کہے کہ وہ تو بڑا اچھا تھا مگر تم ویسے نہیں ہو

اور آگے آتا ہے ہاں حنانہ سے مراد ایک ایسی عورت ہے جو کہ پہلے اپنے سب کا خاوند کو یاد کرتی رہے یعنی اس میں ایک ایسی بیوہ عورت کی بات کی جاتی ہے یا ایک ایسی عورت کی بات کی جاتی ہے جس نے دوسری شادی کی تو پہلے خاوند کو یاد کرتی رہیں اور بہت اچھا تھا مگر تم میں سے نہیں یعنی اپنے دوسرے شوہر سے ہمیشہ گلے شکوئے کرتی رہے گی تم تو اچھے نہیں ہیں وہ بہت اچھا تھا یعنی وہ سب کو یاد کرتی رہیں اور آپ کو یاد نہ کریں آپ ہمیشہ مسکراتی رہے کہ میرا وہ مجھ سے نہیں ہے

5) حداقہ – وہ عورت جو خاوند سے ہر وقت فرمائش ہی کرتی رہے، جو چیز بھی دیکھے اس کی طلبگار ہو جائے

6) براقہ – وہ عورت جو ہر وقت اپنی چمک دمک میں ہی لگی رہے

7) شداقہ – وہ عورت جو تیز زبان ہو اور ہر وقت باتیں بنانا ہی اس کا کام ہو

Sharing is caring!

Categories

Comments are closed.